محکمہ زراعت نے شکرقندی کے کاشتکاروں کو آبپاشی‘ گوڈی اورکیمیائی کھادوں کے بروقت استعمال کی ہدایت کی گئی ہے اور کہاگیاہے کہ اگر بارشیں زیادہ نہ ہوں تو شکرقندی کی کم ازکم 7سے8بار آبپاشی یقینی بنائی جائے اور شروع میں 2سے3مرتبہ ہرہفتہ بعد کی جائے تاہم بعدمیں آبپاشی کا وقفہ 15سے20دن تک بڑھایا جاسکتاہے۔ ڈپٹی ڈائریکٹر محکمہ زراعت(توسیع)قصورمحمداکرم طاہر نے”اے پی پی“کو بتایا کہ شکرقندی کی کاشت جون کے وسط تک کی جاسکتی ہے جواگست اور ستمبرکے مہینہ میں پک کر تیارہوجاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ شکرقندی کی وائٹ سٹار نامی قسم سب سے اچھی پیداوار دینے کی حامل ہے۔انہوں نے کہا کہ پہلی دوآبپاشیوں کے بعد کاشتکار فصل میں موجود جڑی بوٹیاں اور خود روپودے تلف کردیں اورایک یادوبار مناسب وتر میں گوڈی بھی یقینی بنائیں۔انہوں نے کہا کہ جب شکرقندی کی بیلیں بڑھنا شروع ہوں تو گہری گوڈی کرکے پودوں کیساتھ مٹی چڑھا دی جائے

By admin

Leave a Reply

Your email address will not be published.