حیدرآباد چیمبر آف سمال ٹریڈرز اینڈ سمال انڈسٹری کے صدر محمد الطاف میمن نے 16 رکنی وفد کے ہمراہ قائم مقام گورنر سندھ آغا سراج خان دررانی سے گورنر ہائوس میں ملاقات کی۔ چیمبر کے جاری اعلامیے کے مطابق ملاقات میں صدر چیمبر نے تاجر برادری کے مسائل سے انہیں آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ حیدرآباد کی تاجر برادری اور صنعتکاروں کو سندھ حکومت سے ایک شکایت ہمیشہ رہتی ہے کہ وزیر اعلیٰ سندھ اور دیگر وزراحیدرآباد کے تاجروں اور صنعتکاروں سے ملاقات نہیں کرتے، جس کی وجہ سے تاجروں اور حکومت سندھ میں رابطے کا فقدان ہے۔

اِس کے علاوہ حیدرآباد صنعتی زون کی زبوں حالی، صنعتوں کو پانی فراہم نہ کرنا، حیسکو کے مسائل، امن امان کی خراب صورتحال، سوئی گیس کے مسائل، چیمبر کو عمارت کے لئے پلاٹ سمیت دیگر امور زیر غور آئے۔

قائم مقام گورنر سندھ آغا سراج دررانی نے کہا کہ حیدرآباد کی تاجر برادری سندھ اور ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی اور ایک اہم اسٹیک ہولڈر کی حیثیت رکھتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مقامی لوگوں کو روزگار کی فراہمی اور معاشی ترقی میں چھوٹی صنعتوں کا اہم کردار ہے، جس کی نمائندگی حیدرآباد چیمبر آف سمال ٹریڈرز اینڈ سمال انڈسٹری بہترین انداز میں کر رہی ہے۔ گورنر سندھ نے مزید کہا کہ حکومت موجودہ اقتصادی ترقی اور کاروباری ماحول کو بہتر بنانے کے لیے تاجر برادری کے ساتھ مربوط روابط کو یقینی بنا رہی ہے۔

گورنر سندھ نے صدر چیمبر کی طرف سے پیش کئے گئے حیدرآباد کے تاجروں کے مسائل پر چیمبر کے وفد کو یقین دلایا کہ تاجروں اور صنعتکاروں کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے گا۔ وفد میں سینئر نائب صدر محمد ادریس میمن، نائب صدر مسرور اقبال، سابق صدر دولت رام لوہانہ، اراکین مجلس عاملہ محمد عارف میمن، چوہدری محمد اسلم، محمد نعیم شیخ، ڈاکٹر محمد اسماعیل فاروق نامی، وشنو مل، اراکین محمد سہیل میمن، سکندر علی راجپوت، محمد یاسین خلجی، ڈاکٹر عبدالجبار راجپوت، عرفان عاربیانی اور شیخ غلام رسول شامل تھے۔

By admin

Leave a Reply

Your email address will not be published.