راولپنڈی چیمبر آف کامرس نے آمدہ بجٹ میں طویل المدتی پالیسیاں اختیار کرتے ہوئے حکومتی اخراجات میں کمی اور شرح سود کو سنگل ڈیجٹ پر لانے کا مطالبہ کیا ہے ۔ راولپنڈی چیمبر آف کامرس کے صدر ندیم رؤ ف نے اے پی پی سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ بجٹ خسارہ کم کرنے کے لیے حکومتی اخراجات کنٹرول کیے جائیں ، شرح سود کو کم کر کے سنگل ڈیجیٹ میں لایا جائے، چودہ فیصد کی موجود ہ شرح مقامی اور غیر ملکی سرمایہ کاری کے لیے ہرگز سازگار نہیں ہے، بلند شرح سود کے باعث معیشت سکڑ جائے گی، ایف بی آر میں اصلاحات نافذ کی جائیں،ٹیکس نیٹ بڑھایا جائے اور پہلے سے موجود ٹیکس گزاروں کو نہ نچوڑا جائے، آڈٹ پالیسی میرٹ پر بنائی جائے۔

صدر آر سی سی آئی نے کہاکہ ایکسپورٹ سیکٹر اور غیر معروف سیکٹرز جیسے مشینری، قیمتی پتھر، خدمات اور آئی ٹی کے شعبے کے لیے خصوصی مراعات اور پیکیج دیا جائے ، ایس ایم ایز ملک کی معیشت کی ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہیں، ایس ایم ای پالیسی پربھی نظر ثانی کی جائے۔

انہوں نے کہا کہ فوڈ سکیورٹی پر توجہ دینے کی ضرورت ہے، پاکستان جو چند سال پہلے گندم چینی دالیں ایکسپورٹ کرتا تھا اب امپورٹ کر رہا ہے، جس سے زرمبادلہ کے ذخائر کم ہو رہے اور روپے پر دباؤ ہے، زراعت کے شعبے پر توجہ دینا ہو گی۔انہوں نے کہا کہ سستی بجلی کے لیے ہائیڈل اور قابل تجدید توانائی کو فروغ دینا ہو گا، سٹیک ہولڈرز کے ساتھ مشاورت کر کے معاشی پالیسی سازی کی جائے۔

By admin

Leave a Reply

Your email address will not be published.