گورنر پنجاب محمد بلیغ الرحمان نے یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ زرعی بیجوں پر17 فیصد سیلز ٹیکس واپس لینے کا معاملہ وزیر اعظم اور وفاقی وزیر خزانہ کے ساتھ اٹھائیں گے تاکہ کسانوں پر اضافی بوجھ نہ پڑے اور خوراک کی بڑھتی ہوئی ضروریات کو پورا کرنے کیلئے صوبے میں زرعی پیداوار بڑھانے میں مدد مل سکے۔

 

انہوں نے یہ یقین دہانی پاکستان ہائی ٹیک ہائبرڈ سیڈ ایسوسی ایشن کے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہی جس نے ایسوسی ایشن کے چیئرمین شہزاد علی ملک کی قیادت میں ان سے ملاقات کی۔ گورنر نے کہا کہ اچھے اور معیاری ہائی ٹیک ہائبرڈ بیج زرعی پیداوار کو کئی گنا بڑھانے میں کلیدی کردار ادا کرتے ہیں۔ اعلی معیار کے بیجوں کا استعمال کسی بھی زرعی نظام کے سب سے اہم عناصر میں سے ایک اور کامیاب زراعت کی بنیاد ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ2050 تک دنیا کی آبادی 9 ارب سے تجاوز کر جائے گی جس کیلئے اضافی خوراک کی ضرورت ہو گی۔ گورنر پنجاب محمد بلیغ الرحمان نے کہا کہ معیاری بیج فصلوں کی پیداوار میں بنیادی عنصر ہے جو نہ صرف پیداوار کو دو سے تین گنا بڑھاتا ہے بلکہ جڑی بوٹیوں، بیماریوں اور کیڑے مکوڑوں کو روکنے کے علاوہ فصلوں کی پیداواری لاگت میں بھی خاطر خواہ کمی لاتا ہے۔

شہزاد علی ملک نے گورنر کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ زرعی شعبے میں معیاری بیج کی اہمیت کے پیش نظر حکومت کو چاہیے کہ وہ زرعی بیجوں پر سیلز ٹیکس لگانے کا فیصلہ واپس لے تاکہ اس کا بوجھ غریب عوام پر نہ پڑے اور ساتھ ہی ساتھ سی پیک فیز ٹو کے تحت چائنا ہائبرڈ ایگریکلچر ماڈل اینڈ ٹرانسفر آف ٹیکنالوجی میں ہونے والی چین کی سرمایہ کاری کو مکمل تحفظ فراہم کیا جا سکے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان دنیا کے سب سے زیادہ زرعی مصنوعات برآمد کرنے والے ممالک کے ساتھ براہ راست مقابلے میں ہے اور سیلز ٹیکس کے نفاذ سے زرعی پیداوار میں بہت زیادہ کمی آئے گی اورپیداوار و برآمدی اہداف میں کمی کے علاوہ تمام زرعی فصلوں کی قیمتوں میں کم از کم20 فیصد اضافہ ہو جائے گا۔ شہزاد علی ملک نے اس جائز مطالبے پر ہمدردی سے غور کرنے اور سیلز ٹیکس کی واپسی کے لیے وزیر اعظم اور متعلقہ حکام سے بات کرنے کی یقین دہانی پر گورنر کا شکریہ ادا کیا۔

By admin

Leave a Reply

Your email address will not be published.