December 3, 2021

ٓوزیراعظم کا کاشتکاروں کو کھاد بیج اور ادویات پر سبسڈی کا فیصلہ درست ہے، میاں زاہد حسین

ربیع کی فصل کے لئے پانی کی کمی کا اندیشہ ہے جو کسانوں اور فوڈ سیکورٹی کی صورتحال کے لئے نقصان دہ ہو گا،چیئرمین نیشنل بزنس گروپ

Kکراچی  نیشنل بزنس گروپ پاکستان کے چیئرمین، پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے چھوٹے کاشتکاروں کی فلاح و بہبود پر توجہ دینے اور زرعی شعبہ کو جدید بنیادوں پر استوار کرنے کا فیصلہ قابل تعریف ہے۔
کاشتکاروں کو کسان کارڈ، قرضوں کی فراہمی ، کھاد بیج اور کیڑے مار ادویات پر سبسڈی دینے کا فیصلہ درست ہے۔ ربیع کی فصل کے لئے پانی کی کمی کا اندیشہ ہے جو کسانوں اور فوڈ سیکورٹی کی صورتحال کے لئے نقصان دہ ہو گا اس لئے نہروں سے پانی کی چوری کے خلاف سخت اقدامات کا فیصلہ کیا گیا ہے جسکی حمایت کرتے ہیں۔میاں زاہد حسین نے کاروباری برادری سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جب تک زرعی شعبہ کو اڈ ھتیوں سودخوروں اور زخیرہ اندوزوں سے نجات نہیں دلائی جاتی کاشتکاروں کو انکی محنت کا معاوضہ نہیں ملے گا اور زرعی شعبہ مستحکم نہیں ہو سکے گا۔

میاں زاہد حسین نے کہا کہ ربیع کی فصل کے لئے پانی کی فراہمی میں اٹھائیس فیصد کمی کا اندیشہ ہے جس کا حل نکالا جائے۔ میاں زاہد حسین نے کہا کہ حکومت ڈی اے پی اور یوریا کی قیمتوں میں اضافہ کا نوٹس لے کیونکہ اس سے گندم اور ٹماٹر کی پیداوار متاثر ہو گی۔ پنجاب کے مختلف علاقوںمیں ڈی اے پی 7300 کے بجائے ساڑھے آٹھ ہزار روپے سے دس ہزار روپے تک فروخت ہو رہی ہے جبکہ 1760 روپے والی یوریا بائیس سو روپے سے پچیس سو روپے تک فروخت ہو رہی ہے جس سے انکے استعمال کی حوصلہ شکنی ہو رہی ہے جو فوڈ سیکورٹی کی صورتحال کو مذید متاثر کرے گی۔
میاں زاہد حسین نے مذیدکہاکہ حکومت ڈی اے پی اور یوریا کی بلیک مارکیٹنگ پر فوری طور پر قابو پانے کے لئے اقدامات کرے ورنہ کسان سڑکوں پر نکل آئیں گے۔ حکومت کی جانب سے کاشتکاروں کو ڈی اے پی کی ایک بوری پر ایک ہزار روپے کی سبسڈی فراہم کی جاتی ہے تاہم بیوروکریسی کی وجہ سے کسانوں کے لئے اسکا حصول بہت مشکل ہے اس لئے وہ سبسڈی واوچر تین سو روپے میں فروخت کر دیتے ہیں۔ حکومت کھاد کی قیمت کو اعلان کردہ سطح تک لانے کے لئے اقدامات کرے ورنہ سبسڈی بڑھا دے تاکہ کاشتکارسکھ کا سانس لے سکیں